Khawab Ki Tabeer

moaber k baare main

خواب کی تعبیر بیان کرنے کیلئے علم جفر اور فال کا جانا ضروری ہے

حضرت دانیال علیہ اسلام نے ارشاد فرمایا ہے کہ خواب کی تعبیر بیان کرنے والے کے لئے علم جفر اور فال کا جاننا جو استادان قدیم سے منقول ہے نہایت ضروری ہے۔ اگر کوئی خواب کی تعبیر پوچھے تو تعبیر بیان کرنے والا سائل کے نام پر تھے۔ اگر اس کا نام اچھا ہے۔ جیسے محمد احمدی حسین ، فضل، سہیل ، بشیر ، حبیب، محبوب ، وغیرہ۔ تو ایسے ناموں کی دلالت صاحب خواب کے لئے بہتری اور خوشی کی ہوتی ہے اور اگر نام اچھا نہیں ہے تو دلیل غم اور برائی کی ہوتی ہے۔ جب سائل خواب کی تعبیر دریافت کرے اور تعبیر بیان کرنے والے کے سامنے اس وقت گھوڑا یا استر یا گدھا ہے، تو اس کا خواب نیک اور پسند ید ہ ہو گا اور صاحب خواب سفر کرے گا ( خاص کر اگر سامنے گھوڑا یا استر گزار ہیں اور انغام کے موجود ہے۔ حق تعالی کا ارشاد ہے ۔ و خیل ولیخال و خمیر تبر کت بوها و زینبته ط (ترجمہ) گھوڑے اور خچر اور گدھے تمہاری سوار کی اور زینت کے لئے ہیں ۔ اگر سائل کے تجبیر دریافت کرتے وقت کو تین بار بولے تو خیر اور نیکی کی دلیل ہے، اور اگر کوا دو بار بولے تو برائی کی دلیل ہے۔ حضرت جابر مغربی رحمتہ اللہ علیہ نے فرمایا ہے کہ ایک شخص حضرت عبداللہ بن عباس رضی الله تعالی عنہ سے اپنے خواب کی تعبیر پوچھ رہا تھا۔ اسی وقت ایک کوا یا اور گھر کی دیوار پر بیٹھا اور دو بار بولا۔ عبد الله بن عباس نے فرمایا کہ یہ اس بات کی دلیل ہے کہ تجھے برائی پہنچے گی۔ اسی رات چور نے اس کے گھر میں نقب لگائی اور سب کچھ چرا کر لے گیا۔ حضرت عبد اللہ فرماتے ہیں کہ میں نے اپنے دوستوں کو کہا کہ اگر کوئی شخص خواب کی تعبیر دریافت کرے اور کواد و آوازیں دے تو دلیل بدی اور نقصان کی ہے ۔ اگر چار آواز میں دے تو دلیل نیکی اور بہتری کی ہے اور اگر پا آوازیں دے تو برائی کی دلیل ہے اور اگر کواچھ بار بولے تو صاحب خواب کے لئے بہتری کی دلیل ہے۔ حضرت ابن سیر مین نے فرمایا ہے کوے کی طاقت آ واز نیکی کی دلیل ہے اور جنت آواز برائی کی دلیل ہے۔ حضرت جعفر صادق نے فرمایا ہے کہ اگر کوئی شخص اس نیت سے سوئے کہ کوئی خواب آئے اور اس خواب سے نیک اور بد احوال جانا چاہے تو اگر خواب میں بکری یا بکری کا بچہ یاگائے یا گھوڑا یا ان کی مانند ایسا جانور دیکھے کہ جس کا گوشت کھایا جاتا ہے تو صاحب خواب کے کام کی تباہی کی دلیل ہے اور اگر صاحب خواب بند در وازہ دیکھے اور پھر اس کے لئے کھولا جائے یا میٹھا کھانا پانے اور کھائے ۔ یہ باتیں صاحب خواب کے لئے بہتری اور نیکی کی دلیل ہیں ۔

KHwabon Ki Tabeer

Hazrat daniyal allaih alslam ny irshad farmaya hai ke khwabon ki tabeer bayan karny waly keliy ilm jafar aor faal ka janna jo ustadan qadeem sy manqol hai nihayat hi zarori hai . agar koi khwabon ki tabeer pochy to bayan karny wala sail ka name pochy . agar uska name acha hai jaisa ke Muhammad Amad . Hussain . Fazal .Suhail .Basheer Hbeeb Mehboob waghairah.to aisy namon ki dalalt sahib khawab keliy behtri aor khushi ki hoti hai aor agar name acha nahin hai to dalil gham aor burai ki hoti hai . jab sail khwabon ki tabeer daryaft kary aor tabeer bayan karny waly ke samny us waqt ghora ya ustar ya gadha hai to uska khawab naik aor pasandeedah hoga aor sahib khawab safar karyga khas kar agar ghora ya istar guzren aor lagam ke sath maojod hai haq taala ka irshad hai

(Walkhaila walbighala walhameerali tarkaboha wazeenah) (tarjmah)

Ghory , khachar aor gadhy tunhari sawari aor zeenat keliy hain .

Agar sail ky tabeer daryaft ky waqt kawwa teen bar boly. To khair aor naiki ki daleel hai aor agar kawwa do bar boly to burai ki daleel hai.

Hazrat Jabir maghrbi Rahmatullah alaih ny farmaya hai ke aik shakhs Hazrat Abdullah bin abas ( R A) sy apny khwabon ki tabeer poch raha tha  usi waqt aik kawwa aaya aor ghar ki deevar baitha aor do bar bola . Abdullah bin abas (R A) ny farmaya ke ye us bat ki daleel hai ke tujhy burai pahunchy gi.

Usi rat chor ny us ky ghar naqab lagaya aor sab kuch chura ly gaya .

Hazrat Abdullah (R A) farmaty hain ke maine apny doston ko kaha ke agar koi shakhs khwabon ki tabeer daryaft kary aor kawwa do awazen dy to daleel badi aor nuqsan ki hai .agar chaar awazen dy to daleel naiki aor behtri ki hai . agar paanch awazen dy to daleel burai ki hai agar kawwa (6) bar boly to sahib khawab keliy behtry ki daleel hai Hazrat ibn e serene Rahmatullah allaih ny farmaya hai ke kawwy ki taaq awaz naiki ki daleel hai aor juft awaz burai ki daleel hai .

Hazrat Jafar Sadiq (R A) ny farmaya hai ke agar koi shakhs is niyat sy soy ke koi khawab aay aor us khawab sy naik aor bad ahwal janna chahy to agar khawab men bakri ya bakri ka bacha ya gay ya ghora ya inki manind aisa janwar dekhy ke jis ka goosht khaya jata hai to sahib khawab ky kaam ki tabahi ki daleel hai aor agar sahib khawab band darwaza dekhy aor phir us keliy khola jay  ya meetha khana pay aor khaay  Ye baten sahib khawab keliy naiki aor behtri ki daleel hain. Aor Khwabon ki tabeer  k baary main mazeed aap site se maloomat hasil kar sakte hain.

Rate this post

One Comment

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button